جوانی بھی شوہر بھی لیکن زندگی بے مزہ

لندن(جیٹی نیوز)دنیا بھر میں لاکھوں شادی شدہ غریب لڑکیاں جوانی اورشوہر کے ہوتے ہوئے بھی ترس ترس کر زندگی گزارنے پر مجبور ہیں،اقوام متحدہ کی ہیومن رائٹس ادارے نے چونکا دینے والی رپورٹ شائع کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ غریب ممالک میں موجود لاکھوں لڑکیاں شوہر اور جوانی ہونے کے باوجود ترس ترس کر زندگی گزار رہی ہیں اور اس کی چار بڑی وجوہات ہیں۔

غربت کے ماری وہ شادی شدہ خواتین جن کے پاس سرے سے ہی چھت موجود نہیں ان میں بھارت سر فہرست ہے اس کے بعد افریقہ کے کئی ممالک اس لسٹ میں آتے ہیں جہاں جوان شادی شدہ لڑکیاں گھٹ گھٹ کر زندگی گزارتی ہیںاور شرم کے مارے اپنی خواہشات کو کھل کر پورا نہیں کر سکتی۔

دوسری وہ خواتین ہیں جن کے پاس اپنی چھت تو ہے لیکن وہ صرف ایک ہی کمرے میں کنبے کے ساتھ رات گزارتی ہیں اور اگر اندھیرے کا فائدہ اٹھا کر میاں بیوی میںبات بن بھی جاتی ہے تو اس کی شدت کو کم سے کم رکھاجاتا ہے،کھل کر اظہار سے بچوں کے اٹھنے کا خدشہ رہتا ہے اور ایک شادی شدہ جوان لڑکی گھٹ گھٹ کر ہی سیراب ہو جاتی ہے۔

تیسری بڑی وجہ یہ ہے کہ بہت سی شادی شدہ خواتین صرف اس وجہ سے ملاپ سے احتراز کرتی ہیں اور اپنی خواہشات کا گلا گھونٹ دیتی ہیں کیونکہ ان کے پاس ”کنڈم“خریدنے کی بھی سکت نہیں ہوتی اور وہ مزید بچہ بھی لینانہیں چاہتیںاسی لئے وہ گھٹ گھٹ کر جوانی کو بڑھاپے کی دہلیز پر لے جاتی ہیں۔

چوتھی اور بڑی وجہ شوہر کی غربت کے باعث مردانگی میں کمی ہے ،ابھی خاتون کا مزہ دوبالا ہی نہیں ہوتا اور وہ گرم دہانے پر قدم ہی رکھتی ہے شوہر اس کا ساتھ چھوڑ دیتا ہے اور وہ منہ تکتی رہ جاتی ہے۔رپورٹ کے مطابق غریب ممالک میں مردوں کی بڑی تعداد اغذائیت سے محروم رہ جاتی ہے جس کے باعث وہ اپنے جیون ساتھی کو تعلقات کے دوران وہ وقت نہیں دے پاتے جس کی وہ متلاشی ہوتی ہے اور سیراب نہیں ہو پاتی۔

Married women jtnonline2

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.