لڑکیوں کا دوران جاب ساتھی مرد سے عشق یا شادی،زندگی بھر کا پچھتاوا

نیویارک(جیٹی نیوز)امریکہ کی معروف کمپنی کے کیریئر ایکسپرٹ نے اپنے تجربے کی بنیاد پر انکشاف کیا ہے کہ وہ کنواری خواتین جو نوکری پیشہ ہیں اور جاب کے دوران ہی انہیں دفتر کے کسی ساتھی مرد سے محبت ہو جاتی ہے اور وہ دونوں رشتہ ازدواج میں منسلک میں ہو جاتے ہیں ،ان کے ساتھ رہنے کے چانسز نہ ہونے کے برابر ہوتے ہیں اور یہ جوڑا زیادہ وقت تک اکٹھے زندگی نہیں گزار سکتا۔ کیریئر ایکسپرٹ نے دعویٰ کیا کہ اس کے مشاہدے میں نہ ہونے برابرایسے جوڑے دیکھے گئے جنہوں نے ایک ہی دفتر میں رہتے ہوئے نوکری بھی کی ہو اور ان کی ازدواجی زندگی بھی کامیابی سے گزری ہو۔
کیریئر ایکسپرٹ کے مطابق لڑکیوں کو اس سلسلے میں انتہائی محتاط رویہ اختیار کرنا چاہئے کیونکہ مرد حضرات کی جانب سے دوران ڈیوٹی انہیں دی جانے والی توجہ اور پیار بھرا رویہ ان کی ذہنی تھکن اتارنے کا ایک فطری عمل ہوتا ہے ،خاتون ساتھی سے بات چیت،ہنسی مذاق اور اس کی کسی سخت کام میں مددکر دینا محض وقتی اظہار ہے ، اس کا محبت سے قطعاً کوئی تعلق نہیں ہوتا بلکہ ایسا کرنے سے مردساتھی کو تسکین حاصل ہوتی ہے کیونکہ اس کے پاس اور کوئی دوسری آپشن نہیں ہوتی ۔کیریئر ایکسپرٹ نے دوشیزاﺅں کو مشورہ دیا ہے کہ اگر وہ اپنی آنے والی زندگی کو پرمسرت بنانا چاہتی ہیںتو پھر ساتھی ورکر سے شادی کرنے سے مکمل باز رہیں۔
کیریئر ایکسپرٹ نے کمپنی مالکان کو بھی نصیحت کی ہے کہ وہ دوران جاب ورکروں کیلئے ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں اور انہیں دفتر میں جگہ جگہ نمایاں طور پر آویزاں کریں تاکہ خواتین اور مرد اپنی اپنی حدود میں رہ کر کام کر سکیں۔کیریئر ایکسپرٹ نے مزید واضح کیاہے کہ ان باتوں کا مقصد یہ نہیں کہ وہ اظہار آزادی رائے پر کوئی پابندی لگا رہے ہیں بلکہ اس کا مقصد خواتین کو مستقبل میں مشکل فیصلوں سے بچانا ہے۔کیریئر ایکسپرٹ کے مطابق دوران جاب اگر لڑکی کسی مرد ساتھی کو دل دے بیٹھتی ہے اور شادی کر لیتی ہے اب وہ کتنے ہی کھلے ذہن کی مالک کیوں نہ دفتر میں اپنے شوہرکو دوسری خواتین وکرز سے بات کرتے ہوئے یا ہنستے ہوئے دیکھ کر برداشت نہیں کر پائے گی ۔
بدلتے رویوں سے بات آہستہ آہستہ طلاق کی طرف بڑھتی ہے ،دوسری جانب اگر لڑکی دوران جاب حاملہ ہو جاتی ہے تو اس کا شوہر اسے گھر بیٹھنے کا مشورہ دیتا ہے،لڑکی کیلئے یہ قبول کرنا ذرا مشکل ہو تا ہے،اگر وہ بات مان بھی لے تو اسے دفتر میں موجود اپنی ہی سہیلیوں پر شک ہونے لگتا ہے کہ وہ ضرور اس کے شوہر کو اس سے متنفر کرنے کی کوشش کرتی ہوں گی،یوں شک کا پہلا بیج ہی دونوں میں جدائی کا قد آور درخت بن کر ابھرتا ہے ۔کیریئر ایکسپرٹ کے مطابق اس تمام صورتحال کا ذمہ دار کمپنی ہے جو صرف اپنی پروموشن اور خوشحالی کیلئے خوبصورت لڑکیوں کا انتخاب میرٹ سے ہٹ کر کرتی ہے،اگر بنیاد ہی غلط ہو تو پھر رشتے کیسے پائیدار ہو سکتے ہیں۔

Professional women jtnonline

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.