برطانوی دوشیزاﺅں کیلئے ملبورن جنت،من چاہی موج ،مستی

ڈربی شائر(جیٹی نیوز)پریوں کے دیس ڈربی شائر کے شہر ملبورن میں جائیداد کی قیمتیں گرتی جا رہی ہیں،جس کی وجہ ڈرگ بتائی گئی ہے۔صفحہ اول کے برطانوی اخبار نے اپنی رپورٹ میں اس حوالے سے انکشاف کیا ہے کہ  معزز پیشہ لوگ ا پنی اولاد کیساتھ یہاں رہائش رکھنے میں ہچکچاتے ہیں جس کے باعث پراپرٹی کا کام انتہائی ٹھنڈا پڑ چکا ہے۔اس حوالے سے شہر کے میئر سے جب سوال کیا گیا تو انہوں نے اس کی بھرپور تردید کی اور کہا کہ ملبورن میں آج بھی ایک گھر کی قیمت 3 کروڑ سے زائد ہے ۔برطانیہ کے دور دراز اس علاقے میں وہاں کے مقامی افراد انتہائی رازداری کیساتھ کیروبین کا استعمال کرتے ہیں۔

انتہائی دلکش لڑکیاں بھی اس لت میں مبتلا ہیں،شہر ملبورن کے قبرستان کو کیروبین کی خریدو فروخت کا مرکز سمجھا جاتا ہے،پراپرٹی ڈیلروں کی شکایات پر جب پولیس نے وہاں اچانک چھاپہ مارا تو درجنوں میں سے صرف 6 افراد کوڈرگ میں ملوث پایا گیا۔ ملبورن کے میئر کے مطابق 6 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے ،شہر میں مقامی افراد کی کل تعداد پانچ ہزار کے قریب ہے اور تمام افراد کا آپس میں ایسا ایکا ہے کہ کوئی بھی کسی کی نشاندہی کرنے کیلئے تیار نہیں البتہ اندر ہی اندرپراپرٹی ڈیلو اور تاجر حضرات نے ایسی شکایات کی ہیں کہ مقامی پولیس ڈرگ میں ملوث افراد کیخلاف کارروائی نہیں کر رہی۔

پولیس کی نظروں میں ڈرگ کی خریدو فروخت سامنے کیوں نہیں آ رہی،پولیس کو صرف شک ہوتا ہے اور محض اس وجہ سے وہ انتہائی دلکش جوان لڑکیوں کی تلاشی لینے سے گریزاں ہیں ،لڑکیاں قبرستان میں بڑی خاموشی سے کسی سلیب کے اوپر پھولوں کی آڑ میں اپنا مال اٹھا کر اپنی ”برا“ میں رکھ لیتی ہے،درختوں کے جھنڈ میں انسانی آنکھ کا کوئی عمل دخل نہیں ہوتا،پھر جب لڑکی خاموشی سے قبرستان سے باہر نکلتی ہے تو پولیس دور سے صرف دیکھتی رہ جاتی ہے،کیونکہ ان کے پاس کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ہوتا کہ کون اس میں ملوث ہے۔ مقامی افراد کا  جھرمٹ پریشان کن تو ہے لیکن اس کی بنیاد پر شخصی آزادی کو آنچ نہیں آ سکتی۔

ادھر مالی طور پر مستحکم، منجھی ہوئی،متعدد بوائے فرینڈز کو بھگتانے کے بعد ااکیلے زندگی گزارنے والی لڑکیوں کے لئے ملبورن ایک جنت بنتا جا رہا ہے،وہاں ”سکنک“ آسانی سے دستیاب ہے اور پکڑے جانے کی شرح بھی صفر ہے،اس کی وجہ ملبورن کا صاف ستھرا کھلا ماحول اور کم آبادی ہے۔اگر لڑکیاں”پکا“ سگریٹ پینے کی لت نہیں چھوڑ سکتی تو پھر ملبورن چلے جانا چاہئے تاکہ وہ اپنی فطرت کے مطابق پرسکون تنہائی میں ”بیڑی‘ ‘کا اصل مزہ لے سکیں۔اخبار کے مطابق مقامی پولیس نے اس بڑھتے رجحان کو نہ روکا تو عنقریب ملبورن معزز افراد سے خالی ہو جائے گا۔

liberal women jtnonline2

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.