بچے ،والدین سن لیں،سکول اگلے سال ہی کھلیں گے ماہرین کی تصدیق

لندن(جیٹی نیوز)ماہرین تعلیم نے متنبہ کیا ہے کہ رواں برس دنیا بھر میں سکولوںکو کھولنے کامنصوبہ ناممکن ہو گا۔ برطانیہ میںنیشنل گورننس ایسوسی ایشن کے ممبران نے ایک سروے میں انکشاف کیا ہے کہ موجودہ صورتحال کے سبب اس بات کے انتہائی قوی امکانات موجود ہیں کہ سکول نہیں کھلیں گے اور کھل بھی گئے تو انہیں دوبارہ بند کرنا پڑے گا۔

کرونا وائرس کی وباءسے بچنے کی ویکسین دستیاب نہ ہونے کے سبب امکان نہیں ہے کہ لاک ڈا?ن مکمل ختم ہو جائیگا،کاروبار مکمل طور پر کھل جائیں گے،پارکس آباد ہو جائیں گے ، سینما?ں کی رونقیں بحال ہو سکیںگی،طلبہ واپس سکولوں کو چلیں جائیںگے۔یونین کے ممبران نے معمولات زندگی معمول کے مطابق فعال ہونے کو ناممکن قرار دے دیاہے۔

ممبران نے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کے اس فیصلے کو مضحکہ خیز قرار دیا ہے جس کے مطابق تمام ابتدائی عمر کے بچوں کو گرمیوں کی تعطیلات سے پہلے ایک مہینے کے لئے سکول واپس بھیجنے کے عزم کا اعادہ کیا تھا۔سکولوںکے کمروں میں اتنی گنجائش ہی موجود نہیں کہ ایس او پیز کے تحت بچوں کو فاصلے پر بٹھایا جا سکے۔

این جی اے کے چیف ایگزیکٹو ایما نائٹ نے کہا کہ جب تک کہ حکومت کے سائنسی اور طبی مشوروں کے مطابق بہت جلد کوئی ڈرامائی تبدیلی واقع نہ ہو ، پرائمری اسکولوں کے لئے یہ ممکن نہیں ہوگا کہ وہ موسم گرما کی تعطیلات سے قبل پورے ماہ تعلیم کے لئے تمام طلبہ کو واپس مدعو کریں۔

ممبران کے مطابق والدین کے لئے یہ ایک غیر یقینی صورتحال ہے اور ہر گزرتے دن کے ساتھ اس میں اضافہہوتا چلا جا رہا ہے۔ادھرسکول کے سربراہان اور گورننگ بورڈز پر بھی شدید دباو¿ ہے کہ وہ بچوں کو سکول واپس لے آئیں تو کہیں وباءان کو اپنی لپیٹ میں نہ لے لے۔ایسا کرنا حقیقت میں محفوظ نہیں ہوگا۔بچوں کو مستقبل میں تعلیم دینے کے حوالے سے اب بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.