ہاورڈ یونیورسٹی کی تازہ تحقیق ،مستقبل میں بوسے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا

ہاورڈ(جیٹی نیوز) ہارورڈ یونیورسٹی نے کورونا وباءکے پیش نظر اپنی تازہ تحقیق میں انکشاف کیا ہے کہ آئندہ آنیوالے وقتوں میں جنسی ملاپ میں سب سے بری جو شے جانی جائے گی وہ بوسہ لینا ہے۔یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق بوسہ لینے کے عمل کو کرونا بوسہ کے نام سے جانا جائے گا۔ تحقیق کے مطابق میاں بیوی میں جو کوئی بھی باہر کی دنیا سے تعلق رکھتا ہو گا اسے ایس او پیز کے قریب قریب آنے کا حق حاصل نہیں ہو گااور چومنے کا تو سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

تحقیق میں کہا گیا ہے کہ آپ کے اپنے پارٹنرکے ساتھ یا پھر گھر سے باہر کسی دوسرے فرد کیساتھ اس طرح بغیر روک ٹوک سیکس کرنے کے قابل نہیں رہیں گے کیونکہ کسی انجانی وباءکا خوف انسانوں میں اس قدر بڑھ جائے گا کہ وہ جنسی تعلقات کو خاصی حد تک محدود کر دے گا۔ عالمی سطح پر معروف سائنس دانوں نے مشورہ دیا کہ پارٹنر اپنے بیڈروم میںبھی سرجیکل ماسک کو انسانی جذبات پر ترجیح دیں گے اور جذبات میں بھی احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں گی۔

ہاورڈ یونیورسٹی کے سائنس دانوں نے مردوں کو کنڈم پہننے کی سفارش بھی کی ہے کیونکہ ایک اور تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ کچھ مردوں کے سپرم میں کروناوائرس کے نشانات پائے گئے ہیں ہیں۔تحقیق میں سخت انتباہ کیا گیا ہے کہ جنسی عمل میں ہر اس انداز سے پرہیز لازم ہے جس میں زبان اور ناک کا استعمال ہو۔اس تحقیق میں مردوں اور عورتوں کو مزید کہا گیا ہے کہ لاک ڈاون کے بعد سوئے رہنا دانشمندی نہیں ہے بلکہ حفظان صحت کلیدی حیثیت رکھتی ہے ۔

اس حوالے سے دونوں پارٹنرز کا جنسی عمل سے پہلے نہانا اور جسم کوسینی ٹائز کرنا انتہائی ضروری ہے ۔جسم کی مکمل صفائی نہ کرنے کا مطلب وبا کو دعوت دینا ہے۔س تحقیق کے مرکزی محقق ، ڈاکٹر جیک ٹربن نے کہا ہے کہ موجودہ صورتحال میں مریضوں کے لئے جنسی سرگرمیوں سے مکمل پرہیز ہی بچنے کا واحد حل ہے ۔ جنسی تعلقات رکھنے کی بجائے خود کو الگ تھلگ رکھنا ہی سود مند ہو گا۔
بوسہ بریک

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.