سپین،الحمرا پیلس کھل گیا،مقامی خواتین کی بڑی تعداد دیکھنے پہنچ گئی

میڈرڈ(جیٹی نیوز) قیامت کے دن رات دیکھنے اور کورونا لاک ڈاﺅن ختم ہونے کے بعد خواتین کی بڑی تعداد نے ذہن کو سکون دینے کی خاطر سپین کے سب سے زیادہ دیکھے جانے والی یادگار الحمرا پیلس کا رخ کر لیا ہے جسے سپین کی حکومت نے تین ماہ کی بندش کے بعد عوام کیلئے دوبارہ کھول دیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ سیرا نیواڈا پہاڑوں کے ساتھ قدیم نیلے آسمان کے نیچے تاریخی موریس محل اور یورپ کا مسلم فن تعمیر کا شاہکار الحمرا ایک بار پھر عوام کے لئے کھول دیا گیا ہے۔

حکومت کی جانب سے سیر و تفریح کے لئے سخت ایس او پیز کا نفاذ کیا گیا ہے ۔سپین میں21 جون تک سفری قواعد و ضوابط پر عمل درآمد کرنا لازمی قرار دیا گیا ہے۔اس کے علاوہ صرف مقامی افراد ہی الحمرا پیلس کا دورہ کر سکتے ہیں۔الحمرا پیلس جو کبھی بادشاہوں کا گھر تھا اور اب یہ دنیا کے سب سے بڑے اسلامی فن تعمیر کے عجائب گھروں میں سے ایک ہے۔

عام طور پر سپین بیرون ملک سے آنیوالے وزیٹرز سے بھرا ہوتا ہے لیکن کرونا وباءکے پھیلتے ہی بہت سے غیر ملکیوں سمیت عوام کی بڑی تعداد موت کا شکار ہو چکی ہے ۔ الحمرا پیلس کو دیکھنے کیلئے اگلے ہفتے سے سپین کی سرحدیں دوبارہ کھولنے پر وزیٹرز کے بڑے ہجوم کی توقع کی جا رہی ہے۔ سپین میں داخل ہونے والے تمام وزیٹرز پر ایس او پیز پر عملدرآمد لازمی قرار دیا گیا ہے۔ان میں سب سے اہم اصول کسی بھی دوسرے شخص سے 6 فٹ کی دوری اختیار کرنا ہے۔ الحمرا کی سیر کو آنیوالی خواتین نے اپنے تاثرات میں کہا کہ ان کیلئے اس عظیم عجوبہ کی سیر فخر کی بات ہے ۔

یہ ان کیلئے خوشی کا دن ہے۔واضح رہے کہ الحمرا پیلس میںاڑھائی ہزار سیاحوں کے سمانے کی گنجائش ہے تاہم ایس او پیز کی خاطر حکومت نے اس تعداد کو 50 فیصد تک کر دیا ہے تا کہ سماجی دوری برقرار رہ سکے۔ پچھلے سال ، لگ بھگ 2.7 ملین افراد نے اس سائٹ کا دورہ کیا۔سیاحوں کیلئے ہزاروں عربی شبیہات ، پیچیدہ ہندسوں کے نمونے اور اس کے خوبصورت باغات حیرت انگیز نظارے ہیں۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.