رمشا خان ایک روحانی شخصیت بھی،گھومنا پھرنا اسے بہت اچھا لگتا ہے

لاہور(جیٹی نیوز) رمشا خان ایک سادہ سی لڑکی ہے۔ اسے کتابیں پڑھنا ، ویڈیو گیمز کھیلنا اور اپنے دوستوں کے ساتھ گھومنا پھرنا اور اچھی گفتگو کرنا اسے بہت پسند ہے۔اس کے پرستار اسے ایک مضبوط ، پرجوش اور محنتی لڑکی کے طور پر بھی دیکھتے ہیں۔ ان کا سوشل میڈیا پیج انھیں بطور اداکار ہ جانوروں سے محبت کرنے والا اور ایک انسان دوست کے طور پر بیان کرتا ہے۔ رمشا اپنے الفاظ میں اپنے آپ کو بیان کرتی ہے کہ “ہر گروپ میں ایک پریشان کن بچہ” جو انتہا پسندی سے ہائپر اورمکمل توجہ چاہتا ہے ۔

مجھے ایسا لگتا ہے کہ میں تیز ہوا ﺅں سے زیادہ پختہ اور ذمہ دار ہوں۔میں اب بھی محسوس کرتی ہوں کہ میں اپنے بچپن ہی سے ذمہ داری کا احساس رکھتی تھی۔مجھے بچپن ہی سے ڈرائنگ اور خاکہ نگاری سے محبت تھی ۔وہ سکول کے ڈراموں میں پرفارم کرنے کا شوق رکھتی تھی۔ جوانی کیساتھ ساتھ اس میں ایک خاص پختگی اور عملی ذہنیت سامنے آتی گئی۔ اس نے بزنس اسٹڈیز میں جھانکنا ہی بہتر سمجھا۔ اس کے بعد ہی اس نے سنجیدگی سے اداکاری کا فیصلہ کیا۔ مجھے یہ بھی معلوم نہیں تھا کہ میں اداکاری کرنا چاہتی ہوں۔

یہ دراصل میری ماں ہی تھیں جنہوں نے مجھے اس کی طرف دھکیل دیا۔ وہ ہمیشہ مجھ پر یقین کرتی تھی ۔رمشا بتاتی ہے کہ ہوسکتا ہے کہ میں ایک سپر سٹار بنوں ، اگر شادی کروں گی تو بس یہ ہو جائے گی کیونکہ میں ایک اچھی منصوبہ ساز لڑکی نہیں ہوں۔ میں نے چھوٹی عمر میں ہی اپنی والدہ کو سخت محنت کرتے دیکھا ہے اور اسی جذبہ نے مجھے متاثر کیا۔ مجھے یاد ہے کہ وہ صبح چار بجے تیار ہوتیں اور 12 گھنٹے کی مشقت کے بعد گھر لوٹتی تھیں۔ اس نے مجھے اور زیادہ محنت کرنے پر مجبور کیا۔میں نے ہمیشہ اپنی مالی معاونت کیلئے نوکری کی ہے۔

رمشا خان کہتی ہے کہ میں اپنی والدہ سے بھی پیسے مانگ لیتی ہوں۔ اپنے اخراجات اور جیب خرچ کیلئے سکول ٹائم میں ہی پارٹ ٹائم کام کرنا شروع کر دیا تھا۔ اسی دوران والدہ نے مجھے اداکاری کیلئے کہا۔وہ مجھے بتاتی رہیں۔کئی سالوں کے بعد آخر کار پیشہ و رانہ طور پر اس فیلڈ میں داخل ہونے کا فیصلہ کیا ۔میں نے پہلے ہی ماڈلنگ اور کمرشل ، سلور سکرین اور بڑی سکرین پر اداکاری کے جوہر دکھائے ، جس کے حصول میں اداکاروں کو برسوں لگتے ہیں۔ اکثر سوچتی ہوں کہ میں کامیابیوں سے بے خبر ہوں اور بس آگے بڑھتی جا رہی ہوں۔

اس کی وجہ خود کو بہتر بنانے اور بہتر کام کرنے کے طریقوں پر توجہ مرکوز رکھتی ہوں اور پیچھے مڑ کر نہیں دیکھتی۔ ظاہر ہے کہ میں خود کو خوش قسمت سمجھتی ہوں ۔ میرے لئے یہ ضروری ہے کہ ہدایتکار اچھا ہو اور مجھے کہانی اچھی لگے۔ اگر سکرپٹ مجھے مشتعل کرتا ہے تو ، یہ شاید سامعین کے لئے بھی ایسا ہی ہوگا۔ میں ایک بہت ہی روحانی شخصیت ہوں اور خدا سے منسلک ہوں۔ میرے پاس بے حد عقیدہ ہے۔ کوئی منظر شروع کرنے سے پہلے میں بسم اللہ پڑھتی ہوں۔ ہمیشہ خود کو عاجز رکھتی ہوں۔ شہرت اور شوبزسے خود کوبدل لینا ٹھیک نہیں ۔
رمشا خان

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.