کورونا گاﺅن پہن کر بوڑھے مریضوں کو ہلا دینے والی نرس ماڈل بن گئی

ماسکو(جیٹی نیوز)بائیس مئی 2020 یعنی دوماہ قبل ایک 20 سالہ روسی نرس کو بوڑھوں کی کورونا وارڈ میں ٹرانس پیرنٹ شفاف گاﺅن کے نیچے انتہائی مختصر لباس پہننے پر نوکری سے برخاست کردیا گیا تھا تاہم اسے عوامی دباﺅ پر دوبارہ نوکری پر بحال بھی کر دیا گیا تھا۔نوجوان نرس کو اس اقدام پر روسی عوام کی بڑی تعداد نے سراہا جس پر اسے ماڈلنگ کی آفر بھی آ گئی ۔صرف ایک ماہ میں ہی نرس پر پیسہ عاشق ہو گیا۔

Nadia

تفصیلات کے مطابق روس کے ہسپتال میں تعینات ایک نرس نادیہ کورونا میں مبتلا بوڑھے مریضوں کی دیکھ بھال کرتی تھی ،ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے میڈیکل سٹاف کو حفاظتی لباس مہیا کیا گیا تھاتاہم نرس نے یونیفارم زیب تن کرنے کی بجائے صرف اندر ویئر اور برا پہن کر ٹرانس پیرنٹ حفاظتی سوٹ اوڑھ لیا جس سے اس کا جسم صاف نمایاں ہو رہا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ بوڑھے مریض نرس کے وارڈ میں داخل ہوتے ہی چوکنا ہو گئے اور انہوں نے ہسپتال کے چیف سے اس جارحانہ روئیے کی شکایت بھی کی۔

ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے نرس کے ایسا کرنے پر جب انکوائری کی گئی تو اس نے سب کچھ سچ سچ بتا دیا اور کہا کہ وہ خود پر قابو نہ رکھ پائی تھی اس کے وجود کی تپش نے اسے ایسا کرنے پر مجبور کیا تھا۔وارڈ میں کام کرتے کرتے وہ حد سے زیادہ ذہنی دباﺅ کا شکار تھی ۔صبح ڈیوٹی پر آنے سے قبل وہ بہت بوجھل تھی۔ اس نے خود کو شیشے میں دیکھا تو ایک اسے اپنے اندر گرمی کا احساس ہوا۔اس نے کپڑے زیب تن کرنا مناسب نہ جانا اور ویسے ہی ٹرانس پیرنٹ سوٹ پہن لیا۔ اس کا مقصد بوڑھوں میں کرونا کیخلاف قوت مدافعت پیدا کرنا تھا ۔ اسے ذہنی اور جسمانی راحت کا احساس ہوا تھا۔ نرس کے مطابق وہ خود کو اس سخت ڈیوٹی میں آرام دہ محسوس کرنا چاہتی تھی۔

ایک بزرگ مریض نے نرس کے رویہ پر صرف اتنا کہا کہ نرس نے خود کو نمایاں کر کے اس کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی ،ایک مریض نے صرف اتنا کہا کیا نرس نے ہمارے ساتھ انصاف کیا؟۔سوشل میڈیا کے بیشتر صارفین نے اسے مثبت اقدام قرار دیا۔ بعض نے اسے ڈیوٹی ایس اوپیز کی خلاف ورزی کا نام دیا۔ہسپتال انتظامیہ نرس کے جوابی موقف پر دوبارہ غور کرے گی ،ممکن ہے کہ اسے مثبت سوچ پر نوکری پر دوبارہ بحال کر دیا جائے۔ایک اور بوڑھے مریض نے بتایا کہ وارڈ میں مردوں کی طرف سے کوئی اعتراض نہیں ہے لیکن عمر کے اس حصے میں انہیں کچھ شرمندگی محسوس ہوئی ہے۔ایک مریض نے یہ کہہ کر تنقید کرنیوالوں کو حیران کر ڈالا کہ جو مرنے والے ہیں وہ مر جائیں گے۔
نرس ماڈل

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.