بالغ ، عاقل عورت کا تہنا گھر میں رہنا کوئی جرم نہیں، سعودی خاتون نے مقدمہ جیت لیا

ریاض (جیٹی نیوز )سعودی عرب کی ایک عدالت نے دارالحکومت الریاض میں اپنے والد کی اجازت کے بغیر تنہا رہنے اور آزادانہ سفر کرنےوالی خاتون کے حق میں فیصلہ سنا دیا ۔

میڈیارپورٹس کے مطابق اس خاتون کےخلاف اس کے والد نے عدالت میں مقدمہ دائر کیا تھا۔ عدالت نے ایک تاریخی فیصلہ کیا اور اس بات کی توثیق کردی کہ کسی بالغ ، عاقل عورت کا الگ تھلگ کسی گھر میں رہنا کوئی قابل سزا جرم نہیں ہے۔ مذکورہ خاتون کا عدالتی فیصلے کے بعد کہنا تھا مجھے اس فیصلے سے بہت خوشی ہوئی ہے،اس سے سعودی خواتین کی الم ناک کہانیوں کا اختتام ہوگا۔

یاد رہے سعودی عرب میں یوں تو خواتین چاہے وہ نابالغ ہوں یا بالغ، کنواری ہوں یا شادی شدہ ان پر طرح طرح کی پابندیاں عائد ہیں ،وہ آزادی کے ساتھ اپنی زندگی گزارنے سے قاصر ہیں ،لیکن جب سے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلیمان نے وژن 2030ء کا اعلان کیا ہے اور ملک میں معاشرے میں رائج غیر حقیقی رسم و رواج کو ختم کرنے اور اصلاحات لانے کے عزم کا اظہار کیا ہے تب سے سعودی خواتین کو زندگی کے ہر شعبے میں قدم رکھنے اور اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوانے کے مواقع میسر آنے لگے ہیں،حال ہی میں انہیں ملک میں ملازمت کرنے ،بغیر محرم کے سفر کرنے،گاڑی چلانے کی اجازت مل چکی ہے ۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.