برطانیہ میںخالی پیٹ شراب پینے سے27 سالہ دوشیزہ موقع پر ہی دم توڑ گئی

لندن(جیٹی نیوز) بریڈ فورڈ شہر میںشراب کی رسیا ایک دوشیزہ نے اپنے بوائے فرینڈ کے ہمراہ صبح سویرے خالی پیٹ پر شراب پی لی جس کے باعث وہ موقع پر ہی ہلاک ہو گئی۔ بتایا گیا ہے کہ27 سالہ ایلس برٹن برائٹن کی رہائشی تھی اس نے اپنے بوائے فرینڈکے ہمراہ انتہائی تیز شراب پی لی جس سے وہ غیر معمولی حالت میں مبتلاہو گئی اور آخر کار اس کی موت واقع ہو گئی۔

ڈاکٹروں نے دوشیزہ کی موت پر طبی رپورٹ میں بتایا ہے کہ27 سالہ دوشیزہ کے خالی پیٹ میںشراب پینے سے اچانک کیٹوسیڈوسس متحرک ہوا ، یہ ایک میٹابولک پیچیدگی ہے جو خالی پیٹ پی کر پینے سے متحرک ہوسکتی ہے۔ایلس کے دوستوں کا کہنا تھا کہ ایلس شرابی ہرگز نہیں تھی بلکہ وہ حفظان صحت سے متعلق اصولوں پرسختی سے مکمل عمل کرتی تھی جس کا اسے جنون تھا ۔اس کے علاوہ ہمیشہ سائیکل چلاتی اورپیدل چلتی تھی۔

ایلس کا بوائے فرینڈ ہارون ملوی آٹھ برسوں سے اس کے ساتھ تعلقات رکھتا تھا۔اس کے لئے ایلس کی موت ایک انتہائی گہرا صدمہ ہے اور وہ کسی صورت بھی یہ قبول نہیں کر سکتا تھا کہ ایک روز اسے اپنی گرل فرینڈ ایلس کے بغیر وقت گزارنا پڑے گا۔ ایلس کے بوائے فرینڈ نے بتایا کہ ا یلس اپنی موت سے تین ہفتے پہلے اسے صرف ہیلو کہنے کی خاطر سائیکل پر سوار ہو کر اس کے پاس آئی، وہ اسے بے حد محبت کرتی تھی۔

30 سالہ دوست نے بتایا کہ ہمیں معلوم نہیں ہے کہ ایلس نے اپنی زندگی کے آخری چند دنوں میں کتنی شراب پی لیکن وہ شرابی ہرگز نہ تھی۔پولیس نے مختلف پہلوﺅں پر تفتیش شروع کر دی ہے تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ ایلس کا بوائے فرینڈ ایسے کسی واقعہ میں ملوث دکھائی نہیں دیتا جس سے شبہ پیدا ہو کہ ایلس کا قتل ہوا ہے بلکہ اس کی موت خالی پیٹ شراب پینے سے واقعہ ہوئی ہے ۔

2 replies »

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.